کسی جج کو زیب نہیں دیتا کہ وہ ٹی وی چینل پر آ کر اپنے فیصلوں کا دفاع کرے، آئینی ماہرین

جج کو نہیں بلکہ ان کے فیصلوں کو بولنا چاہیے ،مجاز حکام کو جسٹس (ر) کاظم علی ملک کے اقدام کے خلاف کارروائی کرنی چاہیے۔ الزامات لگنے کے صورت میں جج کے پاس دو ہی راستے ہوتے ہیں یا وہ الزام لگانے والے کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کرے اور یا پھر ان کے خلاف ہتکِ عزت کا دعوی دائر کرے , جسٹس(ر) سعید الزمان صدیقی ، ایس ایم ظفر اور کنور دلشاد کا رد عمل