شہریوں کو بہترین سہولیات فراہم کرنا ان پرریاست کااحسان نہیں بلکہ یہ ان کا حق ہے، چیف جسٹس

جب عوام اپنے آئینی حقوق سے محروم ہوتے ہیں تو مایوسی اور منافرت جنم لیتی ہے اور لا قانونیت کے دروازے کھول دیتی ہے , ملک کا ہر شہری بلواسطہ یا بلاواسطہ ٹیکس دہندہ ہے حتیٰ کہ ایک نادار دہقان جب اپنی بچی کے لئے عید پر کپڑے یا جوتی خریدتا ہے توادا کردہ قیمت کا ایک حصہ ٹیکس میں سرکار کو جاتا ہے , کامیاب ریاست کے لئے لازم ہے کہ ہر فرد اور گروہ کو اپنی شکایات کے ازالے کے لئے ریاستی امور میں جگہ مل سکے , بد عنوانی وہ ناسور ہے جو ریاست کی جڑیں کھوکھلی کر رہا ہے، اسی سے پاکستان کو اربوں بلکہ کھربوں روپے کا نقصان ہو رہا ہے، مفلس و نادار طبقے پسے چلے جا رہے ہیں جب کہ دولت مند حضرات مزید دولت مند ہوتے جا رہے ہیں، تقریب سے خطاب