کچھ سیاستدان اور سیاسی جماعتیں قومی مفاد پر سیاست چمکا رہی ہیں، ہر سانحہ کے بعد مایوسی پھیلانے والے دشمن کے ہاتھوں کھیل رہے ہیں،سیکیورٹی صورتحال اندرونی،علاقائی اور جغرافیائی حالات سے متاثر ہے،سیکیورٹی کو خراب کرنے میں جانے پہچانے دشمن ملوث ہیں، تمام تر واقعات کے باوجود دہشت گردوں کو ہر قیمت پر شکست دی جائے گی، سابقہ حکومتوں نے داخلی و سلامتی پالیسی نہ بنائی،موجودہ حکومت نے ملکی تاریخ میں پہلی بار داخلی و سلامتی پالیسی تشکیل دی ، نیشنل ایکشن پلان کے تحت مسلح افواج، سیکیورٹی اور انٹیلی جنس ایجنسیوں کی کامیابیوں کو نظرانداز نہیں کیا جا سکتا، دہشت گردی اور بربریت کے خلاف سیکیورٹی کے میدان میں حاصل کامیابیوں کو سبوتاژ کرنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی،قومی داخلی و سلامتی پالیسی مشترکہ اور کثیر الجہتی ذمہ داری ہے ،اس کیلئے مسلسل کوششوں اور نگرانی کی ضرورت ہے

وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کا نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی میں ’’کمانڈ اینڈ لیڈر شپ‘‘ کورس کے شرکاء سے خطاب