تبلیغی جماعت پر پابندی مضحکہ خیز اور غیر دانش مندانہ فیصلہ ہے ،دہشت گردی کے اصل اسباب و محرکات کا سد باب کرنے کی بجائے پر امن اور اصلاحی جماعتوں کے گرد گھیرا تنگ کرنا سمجھ سے بالا تر ہے ،پنجاب کے تعلیمی اداروں میں رقص وسرود کی محافل پر کوئی قدغن نہیں ،فحاشی و عریانی پھیلانے والوں کو کھلی چھوٹ دیدی گئی ، نفرتیں اور انتشار پھیلانے والوں کے لئے کوئی قانون ہے نہ پابندیاں لگائی جاتی ہیں ،امن و محبت اور دین کی دعوت دینے والی جماعتوں پر پابندیاں عائد کرنا دشمن کے ایجنڈے کو آگے بڑھانے کے مترادف ہے ،پنجاب حکومت فی الفور اپنا فیصلہ واپس لے اور اس نازک موڑ پر ملک دشمن قوتوں کو کھل کھیلنے کا موقع فراہم نہ کیا جائے

پاکستان شریعت کونسل کے امیر مولانا فداء الرحمن درخواستی ودیگر کا اجلاس سے خطاب