سی پیک منصوبے میں پاکستان کے کسی علاقے کو نظرانداز نہیں کیا جائے گا، اس سے آزاد کشمیر ، جی بی ،فاٹا اور چاروں صوبے مستفید ہوں گے، سی پیک منصوبہ 4مراحل میں مکمل ہو گا، ترجیحی منصوبے 2017، قلیلالمیعاد 2020، وسط مدتی 2025اورطویل المیعاد منصوبے 2030ء میں مکمل ہوں گے، خط غربت سے نیچے زندگی گزارنے والوں کا معیار زندگی بلند کرنے کیلئے بی آئی ایس پی میں 102ارب روپے رکھے گئے ہیں، وزیر داخلہ موجودہ سیشن کے دوران بلاک شناختی کارڈز بارے پالیسی کا اعلان کریں گے، اگر اپوزیشن کو سی پیک کے حوالے سے حکومت کی غلط بیانی کا شک ہے تو اس کے لئے قواعد کے تحت تحریک استحقاق لانے کا دروازہ کھلا ہے

قومی اسمبلی میں پارلیمانی سیکرٹریز رانا افضل، سبطین بخاری اور مریم اورنگزیب کے ارکان کے سوالوں کے جوابات