وفاقی اور صوبائی حکومتوں کے خود مختار اداروں کے ذمہ ایک کھرب 52 ارب 78 کروڑ سے زائد رقم واجب الادا ہے‘ سب سے زیادہ بقایا جات آئیسکو نے وصول کرنے ہیں جو 43 ارب 2کروڑ 65لاکھ سے زائد ہے‘ توانائی کی مد ٹوٹل وصولیوں کا حجم 652 ارب روپے ہے‘ وزارت سے تعاون نہیں کیا جارہا ،اگر تعاون کیا جائے تو 2018 تک ملک سے لوڈشیڈنگ کا خاتمہ کردیا جائے گا‘ بجلی کے نادہندگان عدالتوں سے حکم امتناعی لیکر آجاتے ہیں، عدالتوں کے ساتھ ہم مقابلہ نہیں کرسکتے ،عدالتوں میں پہلوانی کرکے ہمیں نااہل ہونے کا شوق نہیں‘ نیلم جہلم منصوبے میں تاخیر سے 134ارب روپے کا نقصان ہوا‘ تاخیر زلزلہ سے ہونے والی لینڈ سلائیڈنگ کے باعث ہوئی‘ منصوبہ برقت مکمل ہوتا تو نقصان نہ ہوتا

وزیر مملکت برائے پانی و بجلی عابد شیر علی کے قومی اسمبلی میں سوالوں کے جواب