جون 2016ء تک دو ہزار زیر التواء مقدمات نمٹا دیئے جائیں گے‘ عدلیہ میں کرپشن کسی صورت برداشت نہیں کی جائے گی‘چیف جسٹس سندھ ہائیکورٹ