حکومت مستحق خواتین کو مختلف ہنر سیکھا کر اپنے پاؤں پر کھڑا کرنے کی پالیسی پر گامزن ہے ، مستحق خواتین کی شادی گرانٹ اور گزارہ الاؤنس کی امدادی رقم کو دوگنا کر دی ہے ‘ زکوة فنڈز سے چلنے والے فنی تربیتی اداروں میں ایک تہائی نشستیں خواتین کے لئے مختص کی جا رہی ہیں‘تربیت حاصل کرنے والی خواتین کو ذاتی کاروبار کے لئے ترجیحی بنیادوں پر امدادی رقم فراہم کی جائے گی‘ضلعی و مقامی زکوة کمیٹیوں میں خواتین ارکان کے تناسب میں اضافہ کرتے ہوئے اسے بڑھا کر 33 فیصد کر دیا گیا

صوبائی وزیر زکوة وعشر ملک ندیم کامران کا خواتین کے عالمی دن کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے خطاب