ملک کی 70فیصد سے زائد آبادی کا انحصار زراعت پر ہے، کسانوں کے مسائل حل ہونے تک ملک ترقی و خوشحالی کی منز ل کو حاصل نہیں کرسکتا ،پاکستان زرعی ملک ہے ، زراعت ملکی معیشت کی ریڑھ کی ہڈی ہے ،حکومت صنعت کے ساتھ ساتھ زراعت کو اہمیت دے ، کاشتکاروں کو فی ایکٹر پیداوار میں اضافہ کیلئے تمام سہولیات دی جائیں ، جاگیر داری نظام زرعی ترقی کی راہ میں بڑی رکاوٹ ہے ،بھارت پاکستان کیخلاف آبی جارحیت کررہا ہے اور پاکستان کو بنجر بنانے کیلئے ہمارے دریاؤں پر بند باندھ کر پانی چوری کررہا ہے، بھارت کی آبی دہشت گردی کے خلاف حکمرانوں نے چپ سادھ رکھی ہے ،کاشتکار پانی کی بوند بوند کو ترس رہے ہیں ،زرخیز اور سونا اگلنے والی زمینیں بنجر ہورہی ہیں ، جماعت اسلامی اقتدار میں آکر بڑی جاگیروں کو بحق سرکار ضبط کرکے چھوٹے کسانوں اور غریب ہاریوں میں تقسیم کردے گی ، کسانوں کو بیج ،کھاد اور زرعی ادویات کی قیمتوں پر سبسڈی دی جائے گی ، حکومت کسانوں کی تمام پیداوار خریدنے کی پابند ہوگی ، حکمرانوں کی لاپرواہی اور عدم توجہی سے جنوبی پنجاب میں مایوسی بڑھ رہی ہے ،حکومت جنوبی پنجاب کے مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کرے ،امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق کی مظفر گڑھ کے کسانوں کے وفد سے گفتگو ، اوکاڑہ میں پریس کانفرنس