پنجاب حکومت اورپاکستان ریلوے کے درمیان لینڈ ریکارڈ کو کمپیوٹرائزڈ کرنے کا معاہدہ طے پاگیا،معاہدے پر پچھلے ڈیڑھ سال سے کام ہو رہا تھا‘ ریلوے کے ریکارڈکی جانچ پڑتال کیلئے 27ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں‘قیام پاکستان سے لے کر اب تک ریلوے کی زمینوں کو ہڑپ کرنے کی کوشش کی گئی ہے‘ریلوے کے بعض پارسل پرتحریر پڑھنا بھی ناممکن ہوگیا ‘24 ماہ میں اراضی کا ریکارڈکمپیوٹرائزاڈ کیا جائے گا‘ منصوبے پر 40کروڑ لاگت آئے گی،خواجہ سعد رفیق