حکومت کی توجہ بنیادی مسائل کے حل کی بجائے رنگ برنگی بسیں چلانے پرہے‘ پاکستان پیپلزپارٹی طاقت کاسرچشمہ عوام کو سمجھتی ہے،‘ روٹی کپڑا،مکان،صحت اور تعلیم انسان کی بنیادی ضرورت ہے‘مگرلوگوں کو آج زبان اورفرقے کی بنیاد پرتقسیم کردیا ہے ‘حکمرانوں کے دانش سکولوں اور سستی روٹی جیسے منصوبوں سے عوام کو نہیں حکمرانوں کے اپنے ’’دوستوں ‘‘کو ہی فائدہ ہو رہا ہے ‘حکمرانوں نے پار لیمنٹ کی منظوری کے بغیر ہی غر یب عوام پر 40ارب روپے کے ٹیکس دھونس دیئے ہیں‘حکمران ہمارے منصوبوں پر اپنے ناموں کے لیبل لگا رہے ہیں ‘ہم نے غر بت اور بے روزگاری کے خاتمے کیلئے بینظیر بھٹو انکم سپورٹ اور وسیلہ حق جیسے پر وگرام دیئے مگر آج ملک میں غر بت اتنی بڑھ چکی ہے کہ شادی جیسا فر یضہ اداکر نا بھی غر یبوں کیلئے مشکل ہو چکا ہے ‘ ڈکٹیٹر ز کی طر ح موجودہ حکمران غر بت اور مہنگائی جیسے مسائل کوکم کر نے کی بجائے اقتدار کو مضبوط کر نے کی پالیسی پر گامزن ہیں ‘اچھا ہوتا حکومت سڑکوں اور دیگر غیر ضروری منصوبوں کی بجائے عوام کے بنیادی مسائل حل کرتی اور انکو صحت اور تعلیم جیسی سہو لتیں فراہم کرتی ‘حکمران ٹماٹر اور کیلا بھی بھارت سے امپورٹ کر رہا ہے جسکی وجہ سے کسانوں پر انکی زندگی تنگ کر دی گئی ہے

پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئر مین بلاول بھٹو زرداری کااجتماعی جوڑوں کی شادیوں کی تقر یب سے خطاب