حکومت نے قومی ایکشن پلان پر اس کی روح کے مطابق عمل کیا ہوتا تو سانحہ چار سدہ پیش نہ آتا‘ حکمران اس وقت جاگتے ہیں جب دہشت گردوں کا ٹولہ آکر ان کے سر میں دھول ڈالتا ہے عوام کے جان و مال کی حفاظت مرکزی اور صوبائی حکومتوں کی ذمہ داری ہے ،دہشت گردی کا ناسور اور کرپشن کا کینسر ملکی سلامتی کیلئے خطرہ بن چکے ہیں ‘باچا خان یونیورسٹی پر حملے کو پاکستان پر حملہ سمجھتے ہیں ‘دہشت گردی کو جڑسے اکھاڑنے کیلئے قومی ایکشن پلان کے تمام نکات پر سرعت کے ساتھ عمل کیا جائے

امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق کا اسلامی جمعیت طلبہ کے زیر اہتمام ’’ سی لاہور‘‘ کے نام سے جاری نمائش کے شرکاء سے خطاب