بلوچستان میں چار نہیں 40لاکھ ناراض بلوچ ہیں، مری معائدہ کے تحت اقتدار کی بندربانٹ کی گئی تو بلوچستان میں مزید ناراض بلوچوں میں اضافہ ہوگا، بلوچستان سے اپنے جائز حقوق کے حصول کیلئے پہاڑوں اور باہر جانے والے ناراض بلوچستان سے بااختیار مذکرات کیلئے ذمہ داری دی گئی تو ہم وعدے اور دعوے کرنے کے بجائے عملی اقدام اٹھائیں گے

بندوق گولی اورجنگ سے کبھی کوئی مسئلہ حل نہیں ہوسکا ،بامقصد مذکرات کی میز ہی مسائل کو حل کرنے میں مددگار ثابت ہوسکتی ہے،جمعیت علماء اسلام کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات وسابق سینیٹر حافظ حسین احمد کی میڈیاسے گفتگو