تحفظ نسواں کا قانون شریعت کے خلاف تو ہے ہی یہ قانون معاشرتی اقدار کی بھی نفی کرتا ہے ‘ ہمارے معاشرے اور خاندانوں میں جاہلانہ روایات ہیں خواتین پر تشدد ایک جرم ہے اور کوئی شخص بھی اس کی حمایت نہیں کر سکتا‘قرآن میں ہے کہ اگر اختلاف ہو تو میاں بیوی کے رشتے داروں سے بندے چنیں جومصالحت کرائیں لیکن‘یہاں کنگن پہنایا جائے گا

جمعیت علما اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا مذہبی وسیاسی جماعتوں کے اجلاس سے خطاب