ایف بی آر حکام برآمد کنندگان کے ریفینڈز کی واپسی کیلئے30فیصد تک رشوت طلب کرتے ہیں،سینیٹ قائمہ کمیٹی خزانہ میں انکشاف

کسی کے اکاؤنٹ سے پوچھے بغیر رقم نکالنا آئین وقانون کی دھجیاں بکھیرنے کے مترادف ہے،ایف بی آر لوگوں کے اکاؤنٹس پر ڈاکہ ڈال رہا ہے، قائمہ کمیٹی , کمیٹی نے ایف بی آر کو بنک اکاؤنٹس سے رقم نکلوانے کے اختیار بارے قانون میں ترمیم آئندہ اجلاس تک ملتوی کردی , ایف بی آر کا آئندہ مالی سال2016-17ء میں آئی ٹی مصنوعات پر ٹیکسز 8فیصد سے2فیصد کرنے کا عندیہ