صدر مملکت اور ترک ہم منصب کا دوطرفہ تعلقات میں مزید گہرائی پیدا کرنے، مسئلہ کشمیر کے حل کرانے اور بھارتی جارحیت کے خاتمے کے حوالے سے مشترکہ تعاون پر اتفا ق

ممنون حسین کا پاکستانی آبدوز کی اپ گریڈیشن میں ترکی کے تعاون اور پاکستان سے سپر مشتاق تربیتی طیاروں کے حصول پر اظہاراطمینان , مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر تشویش ہے ، اقوام متحدہ کے تحت مظالم کی تحقیقات ہونی چاہئیں، پاکستان قبرص کے معاملے پر ترکی کی بھر پور حمایت غیر مشروط طور پر جاری رکھے گا ، پاکستان قبرص کے معاملے پر ترکی کی بھر پور حمایت غیر مشروط طور پر جاری رکھے گا،صدر کی طیب اردگان سے ملاقات میں گفتگو، سی پیک منصوبوں پیش رفت سے آگاہ کیا، ترک ہم منصب کا اظہار مسرت , سفارتی تعلقات کی 70 سالہ تقریبات بھر پور طریقے منا نے ، اعلیٰ سطحی وفود کے تبادلوں،مشترکہ آباد کاری ڈاک ٹکٹ جاری کرنے اور ثقافتی تعاون میں اضافے کا فیصلہ , دونوں ممالک مابین تجارت میں اضافے کیلئے مشترکہ اقدامات کی ضرورت ہے ،ترک سرمایہ کار پاکستان میں توانائی اور انفراسٹرکچر کی سہولتوں سے فائدہ اٹھائیں گے، ترک صدر کانیو کلیئرسپلائرز گروپ میں رکنی کے حوالے سے پاکستان کی حمایت جاری رکھنے کا اعلان، دونوں صدور کا دوطرفہ طویل المدتی دفاعی تعاون کے معاہدے کو جلد حتمی شکل دینے پر اتفاق