ترک صدر کا مسئلہ کشمیر پر پاکستانی مؤقف کی بھرپور حمایت کا اعلان

پاکستان اور ترکی کا مختلف شعبوں میں دوطرفہ تعلقات مزید مضبوط بنانے پر اتفاق،ترک صدر کو پاکستان آمد پر خوش آمدید کہتے ہیں،دونوں ممالک کے درمیان تجارت اور سرمایہ کاری میں اضافہ ہونا چاہیے،دونوں ممالک کے تعلقات باہمی اعتماد اور محبت کے ہیں،پاکستانی قوم ترکی کی منتخب حکومت کی حمایت کرتی ہے،ترک عوام کے حوصلے اور جرت سے بغاوت کو ناکام بنایا گیا،ترکی میں بغاوت کی کوشش پر پاکستان کو دھچکا لگا،ترک قوم نے جمہوریت کی سربلندی کیلئے نئی تاریخ رقم کی , وزیراعظم نوازشریف کی ترک صدر رجب طیب اردوان کے ہمراہ مشترکہ نیوزکانفرنس , لائن آف کنٹرول کی کشیدگی کی صورتحال پر تشویش ہے،مسئلہ کشمیر پر پاکستانی موقف کی حمایت کر تے ہیں ،مسئلہ کشمیر کو مذاکرات کے ذریعے حل کرنے کی حمایت کرتے ہیں،ایل او سی کشیدگی اور مقبوضہ کشمیر کی صورتحال کو نظراندازنہیں کیاجاسکتا،خطے میں امن کیلئے پاکستان اور افغانستان کے درمیان تعلق ناگزیر ہے،سیاسی،عسکری ،تجارتی ،ثقافتی اور معاشی تعلقات کو مزید وسعت دینے کا عزم کرتے ہیں،پاکستان اور ترکی کے درمیان 2017تک فری ٹریڈ معائدہ ہوجائے گا،شاندار استقبال کرنے پر پاکستان کا شکر گزار ہوں،ترک صدر