پاناما لیکس کیس، وزیراعظم پر سو فیصد الزامات کی تصدیقتک سخت فیصلہ نہیں دے سکتے، چیف جسٹس

نیب اور ایف آئی اے نے خود کو فارغ کردیا،صرف تنخواہیں لینے کیلئے بنائے گئے، جب کام کرنے کی باری آتی ہے تو کہتے ہیں یہ معاملہ ہمارے دائرہ کار میں نہیں،جسٹس انور ظہیر جمالی , وزیراعظم نے قوم سے خطاب میں غلط بیانی کی تو نتائج بھگتنا ہونگے،جسٹس اعجاز الحسن، دبئی اسٹیل مل 80 ء میں بیچی، جدہ اسٹیل مل 2001 میں لگائی،21 سال کا وقفہ ہے،حامد خان , وزیر اعظم کی پوری زندگی کی اسکروٹنی نہیں کریں گے، آپ نے خامیاں بتا دیں، اب دستاویزی ثبوت پیش کریں،جسٹس آصف سعید کھوسہ کے ریمارکس،سماعت 29نومبر تک ملتوی