قومی اسمبلی ، اپوزیشن اور حکومتی اتحادیو ں کی جانب سے قومی داخلی پالیسی پر کڑی تنقید، تنقید سے بہتر ہے اپوزیشن مثبت تجویز دے، حکومت کا جواب ،موجودہ جنگ دہشتگردی کیخلاف نہیں بلکہ کثیر المقاصد جنگ ہے ، حکومت نے ناقص پالیسیوں کی وجہ سے طالبان اور ریاست کو برابر کھڑا کردیا ہے ،مولانا فضل الرحمن ، دہشتگردوں کے اقدامات کو حکومت اپنے اقدامات سے ناکام بنا ئے ،مذہبی منافرت پھیلانے والی ناپسندیدہ تقاریر کو روکا جائے،اسلام آباد واقعہ کی تحقیقات ہونی چاہئیں ، شازیہ مری ، حکومت کو وقت پر فیصلہ کرنا چاہئے 2006ء میں چارٹر آف ڈیموکریسی نہیں بارٹر معاہدہ تھا،پہلے پیپلزپارٹی کو باری دی گئی پھر مسلم لیگ(ن) کو مل گئی،آئندہ کیا ہوگا کیونکہ اب اوبامہ نہیں ہوگا،ظفراللہ جمالی، قومی داخلی پالیسی میں15ایکٹ شامل ہیں کیونکہ قانون کا بننا محض کاغذ کا ٹکڑا نہیں بلکہ یہ اثاثہ ہوتا ہے اور لائبریری میں ہوتا ہے، اقبال قادری اور دیگر کا قومی داخلی پالیسی پر بحث کرتے ہوئے اظہار خیال