35 لاپتہ افراد کی عدم بازیابی، وزیراعظم ‘ گورنر اور وزیراعلیٰ خیبر پختونخواہ کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کا عندیہ ، اٹھارہ مارچ تک لاپتہ افراد کی بازیابی بارے عدالتی حکم پر عمل اور انہیں بازیاب کرا یا جائے،عدالت عظمیٰ کا حکم ، عدالت کے صبر کا دامن چھوٹ رہا ہے شہریوں کے حقوق کا تحفظ ریاست کی ذمہ داری ہے اگر لاپتہ افراد بارے حکومت بتانا نہیں چاہتی تو اسے ملک بدر کردے یا کسی دوسرے ملک کا شہری قرار دے دے ،جسٹس جواد ایس خواجہ کے ریمارکس