بڑھتی ہوئی آٹے کی قیمتوں کیخلاف لیاقت بلوچ کی درخواست پر وفاق اور صوبوں سے قیمتیں مقرر کرنے کے طریق کار پر 14 اپریل تک مفصل جواب طلب ، حکمرانوں کے کتے مربے کھارہے ہیں‘غریب آدمی کوسستا آٹا نہیں دے سکتے تو چوہے مار گولیاں ہی دے دیں ‘ جسٹس جواد ایس خواجہ،جب بھی اور جہاں بھی بنیادی انسانی حقوق اور آئین و قانون کی خلاف ورزی ہوگی سپریم کورٹ مداخلت کرے گی اور کسی کو معاف نہیں کرے گی،جمہوری حکومت عام لوگوں کو آٹا بھی سستے داموں فروخت نہیں کرسکتی تو اس کے اقتدار میں رہنے کا کیا جواز باقی رہ جاتا ہے،فاضل جج کے ریمارکس