مسلم لیگ (ن ) اور جمعیت علمائے اسلام (ف) میں دوریاں بڑھ گئیں، متحدہ دینی محاذ قربت اختیار کرگئی،جمعیت علمائے اسلام (ف) کے وفاقی وزراء نے اپنے عہدوں سے استعفیٰ دیدیا،اقتدار کے طلب گار کبھی نہیں رہے، 4ماہ سے وفاقی حکومت سے مختلف قومی ایشوز پر اختلافات تھے، قومی داخلی سلامتی پالیسی، تحفظ پاکستان بل، حکومت طالبان مذاکرات سمیت کئی قومی امور پر اعتماد میں نہیں لیاگیا، اب گیند ن لیگ کے کورٹ میں ہے، مذاکرات کیلئے جے یو آئی (ف) کے دروازے کھلے ہیں،ترجمان جان اچکزئی ، مرکزی سیکرٹری جنرل مولانا عبدالغفور حیدری اور مولانا امجد خان نے استعفوں کی تردید کردی،اختلافات ضرورہیں فیصلہ مجلس شوریٰ میں کیا جائیگا،مولانا امجد خان ،جمعیت علمائے اسلام (ف) اہم اتحادی ہے، اختلاف رائے جمہوریت کا حسن ہے،اتحادی جماعت کے تحفظات دور کرینگے،ملک رفیق رجوانہ