اسلام آباد،سینیٹ قائمہ کمیٹی تحفظ غذائیت و تحقیق کا اجلاس ،80لاکھ ایکٹر زمین پر کپاس کاشت کی جاتی ہے، بیج کی ضروریات چالیس ہزار میٹرک ٹن ہیں ،85فیصد پرائیویٹ سیکٹر سے بیج استعمال کیا جاتا ہے اور آٹھ اقسام میں سے ٹارزن اور نیلم پرائیویٹ کمپنیوں اور ایم این ایچ 886و ایم این ایچ 142بیج کی مانگ سب سے زیادہ ہے ،قائمہ کمیٹی کو بریفنگ، ای سی سی کے آئندہ اجلاس میں زرعی شعبے اورکسانوں کو زیادہ سے زیادہ مراعات فراہم کرنے کے حوالے سے سمری تیار کر لی ہے ۔ سیکریٹری وزارت،قائمہ کمیٹی نے موسمی تبدیلیوں اور کچن گارڈ ن پر بریفنگ طلب کر لی،قائمہ کمیٹی حکومت اور کاشتکاروں کے درمیان پل کا کردار ادا کر رہی ہے بنیادی مقصد کسانوں کو درپیش مسائل مل کر حل کرانا ہے تاکہ زرعی شعبہ اور ملک خوشحالی کی طرف گامزن ہو سکے،چیئر مین کمیٹی سینیٹر سید مظفر شاہ