ججز نظر بندی کیس،مشرف کو ایک دن کا استثنیٰ ،تفتیشی افسر پھر تبدیل کر دیا گیا،غداری کیس میں تحقیقاتی رپورٹ پرفیصلہ ،تحقیقاتی رپورٹ آفیشل سیکرٹ ایکٹ کے زمرے میں نہیں آتی کہ اسے مخفی رکھا جائے۔بیرسٹر فروغ، رپورٹ سیکرٹ ایکٹ کے زمرے میں آتی تو میڈیا پر بھی نشر نہ ہوتی،جسٹس فیصل عرب