قومی اسمبلی قائمہ کمیٹی تعلیم وتربیت کا اجلاس، اساتذہ کی تنخواہوں میں کمی پر شدید برہمی کا اظہار،معاملہ پر ایوان میں توجہ دلاؤ نوٹس لانے کا فیصلہ ،گزشتہ4,5برس سے وزارت خزانہ کی جانب سے ترقیاتی منصوبوں کیلئے مختص کردہ فنڈز جاری نہیں کئے، اب بھی 22ارب سے زائد کی خطیر رقم زیر التواء ہے، ترقیاتی منصوبے تاخیر کا شکار ہیں،چیئرمین ایچ ای سی، بدقسمتی سے ماضی میں حکومتوں نے تعلیم پر توجہ نہیں دی جس کی وجہ سے ملک میں کروڑوں کی تعداد میں بچے سکول جانے سے محروم ہیں، سیکرٹری وزارت،ملک بھر میں12ہزار204 غیر رسمی سکولوں کے ذریعے5لاکھ75ہزار بچوں کو تعلیم فراہم کی جارہی ہے ، غیر رسمی سکولوں میں پڑھانے والے ٹیچرز کو گزشتہ آٹھ ماہ سے تنخواہیں نہیں ملیں،وزارت تعلیم کے حکام کی کمیٹی کو بریفنگ