2014 کراچی جناح ائیر پورٹ حملہ

2014 Jinnah International Airport attack

جون 2014 کو کراچی، پاکستان کے جناح انٹرنیشنل پر 10 دہشت گردوں نے حملہ کیا۔ کل 31 افراد بشمول 10 دہشت گرد ہلاک ہوئے جبکہ کم از کم 18 افراد زخمی ہیں۔ جون کو حملہ 11 بج کر 20 منٹ پر شروع ہوا اور 9 جون کو صبح 4 بجے جا کر ختم ہوا۔ 10 حملہ آور وین پر سکیورٹی چوکی توڑ کر اندر پہنچے اور کارگو ٹرمینل پر حملہ کر دیا۔ حملے میں خود کار ہتھیار، دستی بم، راکٹ پروپیلڈ گرنیڈ اور دیگر دھماکہ خیز مواد استعمال ہوا۔ حملہ آوروں نے سکیورٹی گارڈ کی وردیاں پہن رکھی تھیں اور کئی حملہ آوروں نے خودکش جیکٹ پہن رکھی تھی۔ ان کی وردیاں ائیرپورٹ سکیورٹی فورس کے اراکین سے مماثل تھیں اور انہوں نے جعلی شناختی کارڈ کی مدد سے ائیرپورٹ تک رسائی حاصل کی۔ ایک سینئر پاکستانی انٹیلی جنس افسر کے مطابق کچھ حملہ آوروں نے ایک جہاز کو اغوا کرنے کی ناکام کوشش بھی کی۔ حملہ شروع ہونے کے ڈیڑھ گھنٹے بعد سپیشل سروسز گروپ کے سینکڑوں کمانڈو ائیرپورٹ پہنچ کر حملہ آوروں سے نبرد آزما ہو گئے۔ شنید ہے کہ ابتداء میں حملہ آوروں نے ٹارمیک اور رن وے پر قبضہ کر لیا تھا۔ چند گھنٹوں میں ہی 10 میں سے 8 حملہ آور کاروائی کے نتیجے میں مارے گئے جبکہ دو افراد نے فرار کی راہ نہ پاتے ہوئے خودکش جیکٹ پھاڑ کر خودکشی کر لی۔ ائیرپورٹ کا محاصرہ 5 گھنٹے بعد ختم ہو گیا۔ کل 31 افراد ہلاک ہوئے جن میں 10 دہشت گرد بھی شامل تھے۔ دیگر ہلاک شدگان میں سے 8 ائیرپورٹ سکیورٹی فورس کے افراد، 2 رینجرز، 1 سندھ پولیس کا افسر جبکہ دو پی آئی اے کے ملازمین بھی شامل ہیں۔ کم از کم 18 سکیورٹی کے اراکین بھی زخمی ہوئے اور انہیں عباسی شہید ہسپتال میں داخل کرا دیا گیا۔ پی آئی اے، شاہین ائیرلائن اور ایک غیر ملکی کارگو جہاز کو بھی نقصان پہنچا۔ اصفہانی ہینگر میں بھی ایک دستی بم پھینکا گیا۔

ہم معزرت خواہ ہیں '2014 کراچی جناح ائیر پورٹ حملہ' کی کوئی خبر موجود نہیں ہے