میاں افتخار الدین

Mian Iftikharuddin

لاہور میں‌ پیدا ہوئے باغبانپورہ کے مشہور میاں خاندان سے تعلق رکھتے تھے۔ ایچی سن کالج لاہور اور آکسفورڈ میں تعلیم حاصل کی۔ 1937ء میں کانگریس کے ٹکٹ پر پنجاب کی قانون ساز اسمبلی کے رکن منتخب ہوئے ۔ اس کے علاوہ کانگریس پارٹی کے سکریٹری بھی چنے گئے۔ 1941ء میں باغیانہ سرگرمیوں‌کی بنا پر گرفتار ہوئے۔ 1945 ء میں کانگریس سے علحیدہ ہو کر مسلم لیگ میں شامل ہوگئے۔ 1946ء کے انتخابات میں مسلم لیگ کے ٹکٹ پر پنجاب اسمبلی کے رکن منتخب ہوئے۔ اسی سال پروگرویسو پیپرز لمیٹڈ کے نام سے ایک اشاعتی ادارہ قائم کیا جس کے زیر اہتمام دو روزنامے ، پاکستان ٹائمز ، اور امروز جاری ہوئے۔ پاکستان بننے کے بعد خان افتحار حسین خان کی کابینہ میں مہاجرین اور بحالیات کی وزارت ان کے سپرد ہوئئی۔ لیکن چند ماہ بعد وزارت سے سبکدوش ہو کر پنجاب مسلم لیگ کے صدر بنے ۔ نومبر 1950ء میں‌آزاد پاکستان پارٹی بنائی ۔ پاکستان کی پہلی اور دوسری قانون ساز اسمبلی کے رکن تھے۔ کچھ عرصہ مرکزی اسمبلی کے بھی رکن رہے۔ 1958ء میں حکومت نے پروگریسیو پیپرز لمیٹڈ کے اخبارات کو قومی تحویل میں لے لیا۔

ہم معزرت خواہ ہیں 'میاں افتخار الدین' کی کوئی خبر موجود نہیں ہے