کان کٹا


پیر مئی

ایک لیڈر صاحب جن کا ایک کان کسی حادثے میں کٹ گیا تھا۔ ایک جلسے میں تقریر کر رہے تھے دوران تقریر وہ سینے پر ہاتھ مار کر بڑے جوش سے بولے۔ ”میں قوم کے لئے اپنی جان بھی قربان کرنے کو تیار ہوں۔ مجمع میں سے آواز آئی۔ کان کٹے کی قربانی جائز نہیں۔



متعلقہ عنوان

مزاح

متفرق مزاح